شادی ایک ہی دن ہوئی

دوبھائیوں کی شادی ایک ہی دن ہوئی سہاگ رات کو ان کی بیویاں آپس میں بدل گئی اور انہوں نے ہمبستری بھی کرلی پھر کوفہ کے ایک شخص نے بڑے دھوم دھام سے ایک ساتھ اپنے دو بیٹوں کی شادی کی، ولیمہ کی دعوت میں تمام اعیان واکابر موجود تھے،۔جاری ہے ۔

مسعر بن کدام، حسن بن صالح، سفیان ثوری، امام اعظم بھی شریک دعوت تھے، لوگ بیٹھے کھانا کھا رہے تھے کہ اچانک صاحب خانہ بدحواس گھر سے نکلااور کہا ”غضب ہوگیا “زفاف کی رات عورتوں کی غلطی سے بیویاں بدل گئی

جس عورت نے جس کے پاس رات گزاری وہ اس کا شوہر نہیں تھا۔۔جاری ہے ۔ سفیان ثوری نے کہا امیر معاویہ کے زمانے میں ایسا واقعہ پیش آیا تھا، اس سے نکاح پر کچھ فرق نہیں پڑتا ہے؛ البتہ دونوں کو مہر لازم ہوگا،مسعر بن کدام،امام صاحب کی طرف متوجہ ہوئے کہ آپ کی کیا رائے ہے،

امام صاحب نے فرمایا پہلے دونوں لڑکے کو بلایا جائے تب جواب دوں گا، دونوں شوہر کو بلایا گیا اما م صاحب نے دونوں سے الگ الگ پوچھا کہ رات تم نے جس عورت کے ساتھ رات گزاری ہے، اگر وہی تمہارے نکاح میں رہے کیا تمہیں پسندہے ؟دونوں نے کہا: ہاں! تب امام صاحب نے فرمایا:

تم دونوں اپنی بیویوں کو جن سے تمہارا نکاح پڑھایا گیا تھا،۔جاری ہے ۔ دوبھائیوں کی شادی ایک ہی دن ہوئی سہاگ رات کو ان کی بیویاں آپس میں بدل گئی اور انہوں نے ہمبستری بھی کرلی پھر کوفہ کے ایک شخص نے بڑے دھوم دھام سے ایک ساتھ اپنے دو بیٹوں کی شادی کی،

ولیمہ کی دعوت میں تمام اعیان واکابر موجود تھے،۔جاری ہے ۔ن ہوئی سہاگ رات کو ان کی بیویاں آپس میں بدل گئی اور انہوں نے ہمبستری بھی کرلی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں